پچھلے چند دنوں سے ایک بحث چل رہی ہے ناجائز تجاوازات اور جیسے جیسے یہ آپریشن بڑھتا جا رہا ہے متاثر ین کی تعداد بھئ بڑھتی جا رہی ہے 

آج سے چند سا ل پہلے تمام تھڑے والوں کو اوقاف مارکیٹ میں منتقل کیا گیا اور ان لوگوں نے اپنا کاروبار وہاں پر شروع کر دیا 

پھر یوں ہوا کہ سیاسی مصلحتوں نے اپنا رنگ دکھانا شروع کیا اور پہلے ایک آیا پھر دوسرا اور پھر ایک لائن لگ گئی اور سب باہر اوقاف مارکیٹ میں بہت سوں نے دکانیں بیچ دیں اور کچھ سمجھ داروں نے کرایہ پر چڑھا دیں 

اور جو لوگ بازار میں واپس آئے انہوں نے ایسے ایسے کمالات دکھائے کہ الامان والحفیظ خود تھڑوں پر بیٹھے اور آگے ریڑھیاں لگا کر کرایہ پر چڑھا دیں یا خود ریڑھی پر اور تھڑا کرایہ پر اور جب پکی دکانوں والوں نے یہ دیکھا تو انہوں نے بھی اس کار خیر میں اپنا حصہ ڈالنا شروع کر دیا اور ہھر بازار میں خواتین کا چلنا پھرنا مشکل ہو گیا اور پھر اس بازار کی رونقیں ماندپڑنا شروع ہو گئیں اور ابھی پھر آپریشن شروع ہوا اور ہمارے بہت سے بھائی پھر سے در بدر ہو گئے ہیں اس مسئلہ کا حل کیا ہے 

1تو یہ ہے کہ چوآکے سیاسی ،تاجران اور حکومتی نمائندے آنکھیں بند کر کے بیٹھ جائیں اور کچھ عرصہ تک ان سب لوگوں کو خوار هونے دیں اور پھر سیاسی مصلحتیں بروئے کار لا کر ان کو واپس آنے دیں اور پھر وهی تماشے جیسا ماضی میں بھی هوتا رها هے اور هو رها ھے اٹھاو اور بیٹھاو جو که ایک مستقل حل نہیں هے 

دوسرے حل کی طرف آنے سے پہلے عرض کروں گا که دنیا میں کوئی چیز نا ممکن نہیں اور اتفاق راے پیدا کیا جا سکتا هے بس آپکی نیت سچی هو نی چاہیے اور ایثار کا جزبه بھی یه پلیٹ فارم استعمال کرتے هوے میی ڄوٱ کے تمام سیاسی نمائندوں،تاجروں کے نمائندوں اور حکومتی نمائندوں سے درخواست کروں گا که ٱپ لوگ مل کر بیٹھیں اور مجھے امید هے که ذیل میں سے یا که هو سکتا هے اس سے بھی کوئی اچھا حل نکل سکثا هے اگر اس سلسلے میں هم لوگوں چوآ فرنٹ کی کوئی ضرورت هو ثو هم حاضر هیں 

2 دوسرا حل یہ ہے کہ نالے کو جزوی کور کر دیا جائے اور هر تهڑے والے کو 6*6 فٹ کی جگ الاٹ کی جاے اور تمام لوگوں کو اپنی حدود میں رکهنے کے لیے ٹی ایم او کے بندے اور تاجروں کے نمائندے روزانہ کی بنیاد پر معائنه کریں اور نلے کو جزوی کور بنانے کے لیے جو خرچه هو وه تهڑے والوں سے لیا جاے

3تیسرا حل اڈے کے پیچھے اوقاف کی جگہ پر بازار بنایا جائے اور اسکا خرچہ بھی جو وهاں منتقل هو ان سے لیا جائے

4چوتھا حل یه هے کے موجودہ اوقاف کی مارکیٹ جهاں ختم هو رهی هے وهاں دونوں طرف دکانیں 6*6 کی بنا دی جائیں اور ترجیح انکو دی جائے جنکو پہلے دکانیں نهیں ملیں اور اسکا خرچہ بھی ان لوگوں سے لیا جائے 

پلیز آپ لوگ آگے آئیں اور اس پلیٹ فارم کو استعمال کرتے هو ؤ اپنی رائے کا اظہار کریں اور اپنی تجاویز کا اظہار کریں