تحصیل ہیڈکوارٹرہسپتال چوآسیدن شاہ میں لیڈی ڈاکٹرز کے ڈیوٹی کے اوقات کار میں بد انتظامی اور انتہائی افسوسناک رویے نے مریضوں کی ناک میں دم کر رکھا ھے گزشتہ 15 روز کے دوران وزٹ کرنے والے مریضوں سے حاصل ھونے والی معلومات کے مطابق لیڈی ڈاکٹرز کی مصروفیات کچھ اسطرح ہیں ۔ صبح سوا آٹھ بجے سے ساڑھے آٹھ تک ہسپتال پہنچ جاتی ہیں 9:00 بجے تک چائے اور قہوہ نوشی کے بعد چاروں لیڈی ڈاکٹرزکی ہسپتال کی باؤنڈری کے اندر واک شروع ھو جاتی ھے 10 بجے تک واک مکمل ہونے کے بعد اجتماعی تلاوت کے نام پرتمام لیڈی ڈاکٹرز روم میں بند رہتی ھیں۔ 10 سے 11 بجلی بند ھو جاتی ھے اور تمام مریض خواتین جو صبح سے انتظار میں بیٹھی ھوتی ہیں ان کو کوئی نہیں پوچھتا 11 بجے بجلی آتے ہی ٹی بریک شروع ھو جاتی ھے 11:30 کے بعد مریضوں کو چیک اپ کرنے کا ڈرامہ شروع ھوتا ھے جس دوران مریضوں کو صرف لیبارٹری ٹیسٹ لکھ کر دیئے جاتے ہیں دن 1 بجے بجلی ایک بار پھر بند ھوتی ھے تو چیک اپ ایک پھر ختم ھو جاتا ھے۔ لیڈی ڈاکٹر مننزہ صاحبہ کے بارے میں مریضوں کے تاثرات انتہائی افسوسناک ہیں گورنمنٹ سے تنخواؤں کی مد میں لاکھوں روپے بٹورنے والی لیڈی ڈاکٹرز کو اپنے فرائض کو پوری دیانتداری سے انجام دینے چاہہے ہسپتال میں سہولیات اور مشینری جیسے مسائل اپنی جگہ لیکن مریضوں کے ساتھ حسن آخلاق سے پیش آنے ان  کا چیک اپ کرنے اور ڈیوٹی کے اوقات کار کی پابندی  کرنے کا تعلق  بجلی کے آنے جانے ، ایمبولینس اور جنریٹر کا ڈیزل  نہ ھو نے جیسے مسائل سے بالکل نہیں ھے۔