********چادر و چار دیواری کا تحفظ ******

از قلم ،،،،،شہزاد حیدر گُجر 26 مارچ2016

آج شام شہر میں ایک افسوسناک واقعہ پیش آیا 

(ایک افغانی نوجوان کی بچیوں کے ساتھ بدتمیزی )جن احباب کو علم نہیں ہے وہ تفصیل کےلیے خرم بھائی کی وال پہ جا کر پڑھ لیں یہ تو خرم بھائی کو داد دو جس نے ایک غلط حرکت کو ہاتھ سے روکنے کی کوشش کی ہے 

ایسے کئی واقعات پہلے بھی ریکارڈ پر موجود ہیں جن سے صرف نظر کیا گیا ہے یہ معاملہ نارمل نہیں ہے لہذا اس کو ہنگامی بنیادوں پر سلجھانے کی اشد ضرورت ہے 

نیز ایسے واقعات میں ملوث مقامی پنجابی لڑکوں کو بھی پوائنٹ آوٹ کرکے سخت تادیبی اقدامات کرنے کی ضرورت ہے 

تمام مقامی اسٹیک ہولڈرز کی خدمت میں ایک التجائیہ قطعہ ہے 

***(تم ہماری راہ میں مخمل بچھا نہیں سکتے 

غضب ہے صرف راہ کے کانٹے ہٹا نہیں سکتے

ہماری عزت نفس اور چادر و چار دیواری کا تحفظ اگر تمھارے بس میں نہیں 

کیا ظالم کو اس کا ظلم باور بھی کرا نہیں سکتے)**

چوآ میں رہنے والے سارے پختون برے نہیں ہیں بہت سے اچھے بھی ہیں جو اچھے گھرانوں سے تعلق رکھتے ہیں اور سماجی و کاروباری حلقوں میں اچھی نگاہ سے دیکھے جاتے ہیں ایسے پختون نہ پہلے کسی غلط کاروائی میں ملوث ہوئے ہیں اور یقیناً نہ آئندہ ایسی کسی حرکت کا ارتکاب کریں گے 

لہٰذا متذکرہ بالا حالات و واقعات کو مدنظر رکھتے ہوئے ایک قابل عمل تجویز پیش خدمت ہے جو کہ ہر غیرت مند انسان کے دل کی آواز ہے 

تمام نوجوانوں کی اپنے سیاسی و سماجی مقتدر شخصیات جن کے نام درجہ زیل ہیں 

***بابا حاجی ملک یوسف حاجی ملک مختار ،ملک بشیر للی حاجی یونس صوبیدار امیر راجہ راشد ملک اشتیاق ظفر بھٹی ملک سبط الحسنین ملک اشرف مرحال فاروق مرحال 

ملک وحید حاجی صادق زمان سیٹھی اے ڈی ملک ملک فضل مہر عنایت چوہدری جہانداد اور چوآ فرنٹ گروپ رُوٹس آف چوآ ،صحافی حضرات ***

سے خصوصی گزارش ہے کہ وہ چوآ شہر میں موجود پختون برادری کے اکابرین 

***خان ناظم دین حاجی مصطفی خان 

بابا قلندر شاہ کی اولاد 

بابا جلندر شاہ کی اولاد حاجی خان دین کی اولاد عظیم خان ، اعظم خان ،سردار خان ،جمیل خان ،

شاہ ولی خان ابراہیم خان ،ایوب خان ،شمروز خان ،نیک محمد ***اور دیگر معتبر و کاروباری حضرات کا مشترکہ جرگہ بلائیں اور ان کو باور کرائیں کہ آپ اس شہر میں عرصہ دراز سے مقیم ہیں اور یہاں کے مقامی لوگوں کی غمی و خوشی میں شریک ہوتے ہیں 

جتنی عزت و تعاون آپ کو چوآ شہر میں ملا ہے شاید ہی کہیں اور ملا ہو آپ یہاں پر کروڑوں کا کاروبار بھی کر رہے ہیں اور سکون و عزت سے رہ رہے ہیں اب کچھ تلنگے لوگ آپ کی نیک نامی کو خراب کر رہے ہیں اور آئے روز چوری چکاری لڑکیوں کے سکولوں کے سامنے کھڑا ہونا ،آوازیں کسنا دھونس دھاندلی جیسے غیر اخلاقی افعال میں ملوث ہیں 

پختون تو غیرت مند قوم ہے بہن بیٹیوں کی عزت کرتی ہے پختون تو محنتی قوم ہے دلیر قوم ہے عزت دار قوم ہے 

تو یہ کونسے ایسے عناصر ہیں جو شہر میں تلنگا پن کرتے پھر رہے ہیں غیرت مند تو وہ ہوتا ہے جو دوسرے کی بہن بیٹی کو اپنی عزت جیسی سمجھے بہن بیٹیاں تو سب کی سانجھی ہوتی ہیں 

لہذا آپ سے گزارش ہے کہ اپنی پختون قوم کے بزرگوں کا جرگہ بلائیں جس میں ان سب کو حالات کی سنگینی کا احساس دلائیں اور ایسے عناصر کی حوصلہ شکنی کرنے کی ترغیب دلائیں اپنی نوجوان نسل کو بھی یہ بات ذہن نشین کرائیں کہ دوسروں کی عزت کو اپنی عزت سمجھیں 

کیونکہ مسلمان وہ ہے جس کے شر سے دوسرے مسلمان کی جان مال عزت و آبرو محفوظ ہو 

اللہ تعالی ہم سب کو اچھا مسلمان بننے کی توفیق عطا فرمائے ایک ایسا مسلمان جو دوسرے کی بہن بیٹی کی عزت کی حفاظت اپنا فرض سمجھتا ہو 

**(جن احباب کی دوستی پختون بھائیوں سے ان سے گزارش ہے کہ اپنے ان دوستوں کو یہ پیغام پڑھ کر سنائیں کیونکہ عزت کی قیمت پر دوستی غیرت مند کبھی قبول نہیں کرتے )***