انٹرنیٹ پر اپنی شناخت اور پاس ورڈ کو محفوظ بنانے اور ہیکرز سے بچنے کے لئے ضروری معلومات
کسی بھی ایسے لنک کو کلک نہ کریں جس کے بارے ہیں آپ کو معیاری معلومات کے حصول کا یقین نہیں۔ تمام ایسے لنک اور تصاویر جن کو خوبصورت ماڈلز، آن لائن ڈالر کمانے کے طریقے اور پرکشش جابز آفرز کے ساتھ پر کشش بنایا گیا ہر گز کلک نہ کریں ۔
اپنے ای میل ان باکسز میں موصول ھونے والی ایسی تمام ای میلز کو بغیر کھولے ڈیلیٹ کر دیں جن میں اس نوعیت کے لنکس کو شیئر کیا گیا ھو۔
سادہ ترین پاس ورڈ کے انتخاب سے گریز کریں جیسے آپکا نام ،، تاریخ پیدائش، بچوں کے نام ، گنتی اور حروف تہجی ترتیب کے ساتھ کبھی بھی پاس ورڈ کے طور پر استعمال نہ کریں ۔
ایسے تمام کمپیوٹرز پر پاس ورڈ محفوظ نہ کریں جو آپ کے ذاتی استعمال میں نہیں ہیں جیے انٹرنیٹ کیفے یا لائبریری وغیرہ کے کمپیوٹرز
کم ازکم آٹھ یا اس سے زیادہ حروف پر مشتمل پاس ورڈ استعمال کریں جو ہندسوں ، انگریزی کے چھوٹے اور بڑے حروف اور کچھ سپیشل علامات جیسے @ $ ٪ & پر مشتمل ھو۔
پاس ورڈ ٹائپ کرتے وقت کوشش کریں کہ کوئی آپ کو دیکھ نہ رہا ھو ۔
مختلف ویب سائٹس پر مختلف پاس ورڈز کے اسعتمال کو یقینی بنائیں۔ ایک جیسے پاس ورڈز سے گریز کریں اور اپنے پاس ورڈز کو کسی کے ساتھ شئیر نہ کریں
سوشل میڈیا پر غیرمکمل پروفائل، بغیر شناخت کے آئی ڈی ، اور مکمل طور پر اجنبی روابط کو اپنے فرینڈز یا کنیکشنز میں شامل نہ کریں اور نہ ہی ایسی کوئی ریکوئسٹ قبول کریں ۔
کسی بھی اجنبی سے چیٹ کے دوران یا ای میلز کے ذریعے موصول ھو نے والی کوئی فائل قبول یا ڈاؤن لوڈ نہ کریں ۔
اینٹی وائرس سوفٹ وئیرز کو اپ ڈیٹ رکھیں
خود بخود کھلنے والے پیجز کو فوراً بند کر دیں
اور ایسی سائٹس جن پر خودبخود کھلنے والے پیجز کی بوچھاڑ ھو کبھی بھی وزٹ نہ کریں
جنک فولڈرز میں آنے والی ای میلز کو اس وقت تک نہ کھولیں جب تک آپ کو یقین نہ ھو کہ یہ واقعی بن بلائی ای میل نہیں ھے
جو ویب سائٹس 2 طرح کی لاگ ان سیکیورٹی کی سہولت فراہم کرتی ھیں ان پر اپنے موبائل نمبرکے ذریعے ڈبل سیکیورٹی کو فعال بنائیں
آن لائن شاپنگ کے دوران کسی بھی ویب سائٹ پر اپنا پاس ورڈ یا کریڈٹ یا ڈیبٹ کارڈ کی معلومات محفوظ نہ کریں
آن لائن ٹرانزیکشن صرف Https://سے شروع ھونے والی ویب سائٹ پر ھی کریں
سوشل میڈیا پر معلومات سوچ سمجھ کر شئیر کریں
آن لائن چیٹ میں کریڈٹ کارڈ نمبر یا کسی بھی قسم کی لاگ ان معلومات شیئر نہ کریں
بچوں کو تنہائی میں انٹرنیٹ سے متصل کمپیوٹرز اور سمارٹ فونز کے استعمال کی اجازت ہرگز نہ دیں
موبائل فونز اور کمپیوٹرز کو استعمال نہ ھونے والے اوقات میں لاک رکھنے کی عادت اپنائیں۔